poetry on dhoop

  1. Angelaa

    Ghazal Usi ka dard hai jis ke jigar ka lasha hai

    اسی کا درد ہے جس کے جگر کا لاشہ ہے میں جانتا ہوں کہ باقی تو سب تماشہ ہے میں کیا بتاؤں جو ٹوٹا ہے مجھ پہ ظلم و ستم میں کیا لکھوں کہ مرا درد بے تحاشہ ہے بنی ہیں سازشیں موسم نے دھوپ سے مل کر ہوا نے میرے ہر اک پھول کو خراشا ہے امیر شہر میں تجھ کو تری دہائی دوں کہ میرا تولا بھی تیری نظر میں ماشہ...
  2. Ustad

    Ghazal Zabton ki aur Qadron ki Rawani dekhna by Pritpal Singh Betab

    zabton ki aur qadron ki rawani dekhna phir hawa mein chaar-su ek bad-gumani dekhna lamha lamha phailta hi ja raha hai chaar-su shahr mein jangal ki ek din be-karani dekhna chahta hai wo mujhe KHush dekhna har haal mein chhin lega mujh se meri nauha-KHwani dekhna aane wali aur abhi raaten hain...
  3. Ustad

    Ghazal Aandhi mein Charagh jal rahe hain by Akhtar Hoshiyarpuri

    aandhi mein charagh jal rahe hain kya log hawa mein pal rahe hain ai jalti ruto gawah rahna hum nange panw chal rahe hain kohsaron pe barf jab se pighli dariya tewar badal rahe hain miTTi mein abhi nami bahut hai paimane hunuz Dhal rahe hain kah de koi ja ke taeron se chyunTi ke bhi par...
  4. Maria-Noor

    Ghazal Aag ho to jalne mein dair kitni lagti hai

    آگ ہو تو جلنے میں دیر کتنی لگتی ہے برف کے پگھلنے میں‌ دیر کتنی لگتی ہے چاہے کوئی رک جائے، چاہے کوئی رہ جائے قافلوں کو چلنے میں دیر کتنی لگتی ہے چاہے کوئی جیسا بھی ہمسفر ہو صدیوں سے راستہ بدلنے میں دیر کتنی لگتی ہے یہ تو وقت کے بس میں ہے کہ کتنی مہلت دے ورنہ بخت ڈھلنے میں دیر کتنی لگتی ہے موم...
  5. Maria-Noor

    Ashaar Is haseen manzar se dukh kai ubharne hain

    اس حسین منظر سے دکھ کئی ابھرنے ہیں دھوپ جب اترنی ہے برف کے مکانوں پر
  6. Asad Rehman

    Ghazal Ehsaas barf barf he by Seema sharma

    سورج کی تپتی دھوپ نے مارا ہے ان دنوں پیڑوں کی چھاؤں کا ہی سہارا ہے ان دنوں ہم کو بھی دل کے درد نے مارا ہے ان دنوں درد جگر غزل میں اتارا ہے ان دنوں احساس برف برف ہیں دل کی زمین پر یادوں کی دھوپ کا ہی سہارا ہے ان دنوں سوکھے بدن کی خاک پہ غم کی پھوار تھی یہ ہی سبب ہے جسم میں گارا ہے ان دنوں یہ...
  7. Asad Rehman

    Ghazal Duniya barf ka toda hai, Jitna jal sakta hai jal By Baqi Siddiqui

    اپنی دھوپ میں بھی کچھ جل ہر سائے کے ساتھ نہ ڈھل لفظوں کے پھولوں پہ نہ جا دیکھ سروں پر چلتے ہل دنیا برف کا تودا ہے جتنا جل سکتا ہے جل غم کی نہیں آواز کوئی کاغذ کالے کرتا چل بن کے لکیریں ابھرے ہیں ماتھے پر راہوں کے بل میں نے تیرا ساتھ دیا میرے منہ پر کالک مل آس کے پھول کھلے باقیؔ دل سے گزرا...
  8. sahrish khan

    Ghazal Apni dhoop mein bhi kuch jal, Her saaye ke sath na dhal

    اپنی دھوپ میں بھی کچھ جل ہر سائے کے ساتھ نہ ڈھل لفظوں کے پھولوں پہ نہ جا دیکھ سروں پر چلتے ہل دنیا برف کا تودا ہے جتنا جل سکتا ہے جل غم کی نہیں آواز کوئی کاغذ کالے کرتا چل بن کے لکیریں ابھرے ہیں ماتھے پر راہوں کے بل میں نے تیرا ساتھ دیا میرے منہ پر کالک مل آس کے پھول کھلے باقیؔ دل سے گزرا پھر...
  9. sahrish khan

    Ghazal Hain Baraf baraf abhi meray Ehd ki Raatan

    لہو ہی کتنا ہے جو چشم تر سے نکلے گا یہاں بھی کام نہ عرض ہنر سے نکلے گا ہر ایک شخص ہے بے سمتیوں کی دھند میں گم بتائے کون کہ سورج کدھر سے نکلے گا کرو جو کر سکو بکھرے ہوئے وجود کو جمع کہ کچھ نہ کچھ تو غبار سفر سے نکلے گا میں اپنے آپ سے مل کر ہوا بہت مایوس خبر تھی گرم کہ وہ آج گھر سے نکلے گا...
  10. Ellaf khan

    Ghazal Es Karri Dhoop Main Jalty Hue Paaon Ki Tarha..

    "غزل" "اِس کڑی دھوپ میں جلتے ہوئے پاؤں کی طرح تُو کسی اورکے آنگن میں ہے چھاؤں کی طرح تُو تو واقف ہے میرے جذبوں کی سچائی سے پھر کیوں خاموش ہے پتھر کے خداؤں کی طرح میں تو خوشبو کی طرح ساتھ رہا ہوں تیری تو بھٹکتا رہا بے چین ہواؤں کی طرح وہ جو برباد ہوئے تھے وہی بد نام ہوئے ہیں تو تو...
Top