Nazm Ay Omar E Zyada Ka Sila Mangney Walay By Shahzad Baig

intelligent086

intelligent086

Star Pakistani
5,250
7,587
881
اے عمر زیادہ کا صلہ مانگنے والے
تو اپنے ہی گھر کے کسی کونے کے لیے تھا
ہم جو دیوار ہوئے بیٹھے ہیں‘ دیوار کے ساتھ
یہ نہ ہو سایۂ دیوار پہ تہمت لگ جائے
ہر کوئی ہاتھ میں تلوار لیے بیٹھا ہے
میں تو جیسے کسی مقتل میں اتارا ہوا ہوں
شہر میں تیری پذیرائی بہت
تُو تماشا بن تماشائی بہت
خشکی کا بھی رستہ تھا ترے شہر کی جانب
کشتی کا سفر مجھ کو ڈبونے کے لیے تھا
تُو نے کیا سوچ کے محفل سے اٹھایا ہے ہمیں
مہرباں ہم تو ترے بعد کے رکھے ہوئے ہیں
تیری دستک سے ہی پہچان لیا ہے تجھ کو
روشنی سے تری تنویر ہُوا جاتا ہوں
توڑ کر مجھ کو میاں تو بھی سلامت نہ رہا
اپنے ملبے سے ترے نقش اٹھانے لگا ہوں
ہر ایک دوست صفِ دشمناں میں شامل تھا
جبھی تو بنتی نہیں میری اس جہان کے ساتھ​
 

Create an account or login to comment

You must be a member in order to leave a comment

Create account

Create an account on our community. It's easy!

Log in

Already have an account? Log in here.

Similar threads

Abdullah Nazeer
    • Haha
    • Wow
  • Abdullah Nazeer
  • 3
  • 26
Replies
3
Views
26
Abdullah Nazeer
Abdullah Nazeer
intelligent086
Replies
3
Views
57
intelligent086
intelligent086
Angelaa
    • Like
  • Angelaa
  • 9
  • 109
Replies
9
Views
109
Angelaa
Angelaa
Asad Rehman
Replies
3
Views
53
intelligent086
intelligent086
intelligent086
    • Like
  • intelligent086
  • 11
  • 113
2
Replies
11
Views
113
intelligent086
intelligent086
Top