sahrish khan

Star Pakistani
I Love Reading
Level
11
Awards
24
نمی لے کر نگاہوں میں
مناظر کھوجتی آنکھیں
ایک اک نقش یادوں کا
ذہن میں قید کرنے دو
ہر اک آہٹ ، ہنسی ، قہقہے
شبیہ من چاہے منظر کی
سبھی دِل میں پرونے دو
مجھے ہنس ہنس کے رونے دو

بچھڑنا گو ضروری ہے
جدائی اک حقیقت ہے
نئے موسم تو آئیں گے
یہ موسم پِھر نہیں ہوں گے
ہزاروں لوگ تو ہوں گے
مگر چہرے نہیں ہوں گے

میں کہنے کو تو کہہ دوں گی
" وِداع اے یارِ من ، دائم

ملیں گے ہم ضرور آخر
ہیں جب تک رابطے قائم
مگر پِھر وقت کی زد میں
کہاں ، کب ، کون آئے گا
یہ پل کب لوٹ پائے گا

اداس موسم بھی رو پڑا ہے
ہمیں وِداع کرنے میں جیسے
اسے بھی مشکل سی ہو رہی ہے
اے سنگی ساتھی ہوا بہارو
ہمیں وِداع دو ، ہمیں وِداع دو
 

Top