Ghazal Teray hath ki chae tou pee the by Nasir Kazmi

sahrish khan

sahrish khan

Star Pakistani
I Love Reading
6,873
13,952
736
پل پل کانٹا سا چبھتا تھا
یہ ملنا بھی کیا ملنا تھا
یہ کانٹے اور تیرا دامن
میں اپنا دکھ بھول گیا تھا
کتنی باتیں کی تھیں لیکن
ایک بات سے جی ڈرتا تھا
تیرے ہاتھ کی چائے تو پی تھی
دل کا رنج تو دل میں رہا تھا
کسی پرانے وہم نے شاید
تجھ کو پھر بے چین کیا تھا
میں بھی مسافر تجھ کو بھی جلدی
گاڑی کا بھی وقت ہوا تھا
اک اجڑے سے اسٹیشن پر
تو نے مجھ کو چھوڑ دیا تھا
ناصر کاظمی
 

Create an account or login to comment

You must be a member in order to leave a comment

Create account

Create an account on our community. It's easy!

Log in

Already have an account? Log in here.

Similar threads

Maria Hussain J
Replies
4
Views
60
Veer
Asad Rehman
Replies
3
Views
58
Veer
Ustad
Replies
4
Views
86
Veer
intelligent086
    • Like
  • intelligent086
  • 5
  • 74
Replies
5
Views
74
intelligent086
intelligent086
sahrish khan
Replies
9
Views
112
sahrish khan
sahrish khan
Top